اللہ تعالیٰ کے بہت خوبصورت اور پیارے نام ہیں ہم جس کا ذکر کر رہے ہیں یہ ایک اللہ کا صفاتی نام ہے اور ایک اللہ کا نام ہے ہم ان دونوں کو ملا کر پڑھیں گے تو جس طرح تحریر کیا جائے گا اسی طرح پڑھئے گا اور عمل کیجئے گا آپ کے مال میں اور آپ کے رزق میں اضافہ بھی ہو گا اور اللہ تعالیٰ برکتیں بھی ڈالے گا۔وہ نام یہ ہے یاَرَزَّاقُ یا اللہ یا رزاق اللہ تعالیٰ کا صفاتی نام ہے اور یا اللہ ہمارے اللہ کا اپنا ذاتی نام ہے ان دوناموں کی برکت سے انشاء اللہ

ہمیں رزق کی تنگی کبھی نہیں ہو گی اگر آپ اس وظیفہ کو اپنا معمول بنا لیتے ہیں بچیاں بھی گھر میں عورتیں بھی پڑھیں اس کی برکت بہت زیادہ ہے رزق دینے والی ذات صرف ہمارا رب ہے اور اس کی محبت ہم سے بہت زیادہ ہے اور جو محبت کرتا ہے وہ تکلیف نہیں دیتا ہمارا اللہ تو اپنے بندوں سے بہت محبت کرتا ہے ہم تو مسلمان ہیں اس کے پیارے محبوب آقا دوجہاں محمدﷺ کے امتی ہیں مشرک کافر سے بھی اللہ پیار کرتا ہے۔
حضرت ابراہیم ع س کا واقعہ۔حضرت ابراہیم ع۔س وہ پہلے نبی تھے جن کی یہ سنت ہے کہ وہ مہمان کے بغیر کھانا تناول نہیں فرماتے تھے جب بھی کھانا کھاتے تو کسی نا کسی مہمان کے ساتھ بہٹھ کر ہی کھانا کھاتے مہمان نوازی کی ایسی پیاری بنیاد رکھی انہوں نے ایک مرتبہ ایک مہمان آیا اور آپ اس کو لے کرکھانا کھانے بیٹھے اور کھانا رکھا تو اس مہمان نے لقمہ توڑا اور اپنے منہ میں رکھ لیا ابراہیم ع۔س نے یہ دیکھا تو آپ نے فرمایا یار بسم اللہ الرحمن الرحیم تو پڑھ لے تو مشرک کہنے لگا میں تو اللہ کو جانتا ہی نہیں تو ابراہیم نے آگے سے کھانا اٹھا لیا میں منکر کو کھانا نہیں دیتا وہ اٹھ کر ابھی دروازے تک بھی نہیں پہنچا کہ جبرائیل آگئے سبحان اللہ میرا اللہ کتنا مہربان اور کریم ہے لوگوں کو پتا نہیں اللہ کو کیا سمجھ لیا ہے جبرائیل آگ ئے تنبہیہ لے کر ڈانٹ لے کر کس کی خاطر مشرک کی خاطر اور کس کی تنبہیہ کی جا رہی ہے خلیل اللہ کو چار ہزار نبیوں کے باپ کو تنبیہ کی جا رہی ہے لاالہ الا اللہ ابراہیم خلیل کہ ابراہیم منکر تو وہ میرا تھا ستر سال سے میں نے روٹی بند نہیں کی تو کون ہے روٹی اس کے آگے سے اٹھانے والا یہ تو میرا ور اس کا معاملہ ہے کہ وہ مجھے نہیں مانتا تیرے پاس تو مہمان بنا کر بھیجا تھا جاؤ اسے کھانا کھلاو۔یہ میرا اللہ مشرک کے لئے ہے تو حضرت ابراہیم کی دوڑ لگوادی اور آپ نے کہا آجاواپس آجا میرے اللہ نے تو مجھے ڈانٹ دیا تیری خاطر آؤ کھانا کھاو وہ کہنے لگا ابراہیم تیرا اللہ تو بہت زبردست ہے میں اسے مانتا بھی نہیں پھر بھی وہ میری سفارشیں کرتا ہے چل مجھے اس کا کلمہ ہی پڑھا دے اور ایمان بھی نصیب ہو گیا۔

شیئر کریں