نئی نویلی دلہن کاسسرال جنت کیسے بن سکتا ہے؟؟
اللہ تبارک وتعالی ہر کسی کی بہن بیٹی کے نصیب میں خوشیاں عطا فرمائے (آمین)

 

السلام و علیکم
محترم خواتین و حضرات کہا جاتا ہے کہ بیٹی پرایا دھن ہے جی بلکل یہ ایک نظام قدر ت ہے کہ ہر کسی کواپنی بہن بیٹی ایک نا ایک دن اپنے دل کا ٹکڑا اپنے سے جدا کر کے رخصت کرنی پڑتی ہے جسے والدین لاڈ پیار سے پالتے ہیں جس کی چھوٹی چھوٹی خواہشا ت کی خاطر والدین فکر مند رہتے ہیں اپنی خواہشات کو کسی ردی کی ٹوکری میں پھینک کر محدود سی ضروریات کو ترجیح دینے کے ساتھ جن کی خواہشات پوری کرنے میں مصروف رہتے ہیں والدین بھائی ان بیٹیوں بہنوں کو آنکھوں میں آنسولئے ایک دن کسی دوسرے کے حوالے کر نا پڑتا ہے۔

 

 

طلاق کے متعلق سوچنے والے حضرات سے گزارش ہے
محترم مرد حضرات سے ایک گزار کرتے ہیں کہ شادی بیاہ کوئی کھیل تماشا نہیں ہے پانچوں انگلیاں برابر نہیں ہیں اس لئے میرا یہ میسج جن کے لئے ہے انہیں میں متوجع کرتاہوں کہ طلاق کا حق اسلام نے مرد کے محفوظ ہاتھوں میں دیا کیوں کہ عورت ٹیڑھی پسلی کی پیدائش کسی بھی ہلکی تلخیوں سے اچانک طلاق مانگلنے پر اتر سکتی ہے لیکن مرد کو چاہیے کہ وہ سوچ سمجھ کر فیصلہ کرے اور اپنے فیصلے میں اسلامی احکامات کو مدنظر رکھے۔اسلام کو مد نظر کیوں رکھے؟کیونکہ اسلام نے اس پر بھروسہ کر کے اسے طلاق کی چابی پکڑا دی تو مرد حضرات اسے سنبھال کر رکھیں اور جہاں ضرورت ہو وہیں اس کا استعمال کریں۔

 

 

 

مرد حضرات متوجع ہوں
محترم مردحضرات میرا یہ پیغام پڑھنے سے پہلے محترم احباب آپ تھوڑی دیر کے لئے خاوند والی نشست سے اٹھ کرکسی بیٹی کے باپ اور کسی بہن کے بھائی کی جگہ آ جائیں۔آ گئے۔ویر گڈ اب روشنی ڈالتے ہیں ایسے مرد حضرات پر جو شادی بیاہ کو کھیل سمجھتے ہیں گزارش ہے میری ایسے حضرات سے کہ ایک بار دو بار چاہیں تو سو بار یا ہزار لاکھوں مرتبہ سوچ لیا کریں رشتہ ازدواج میں منسلک ہونے سے پہلے دو۔چار۔دن۔ماہ نہیں ہوتے اور طلاق یہ کیا ہے بھئی کوئی شغل ہے جسے آپ ووٹ دے کر وزیر اعظم بناتے ہیں اسے بھی آپ دو چار دن میں اتار پھینکیں تو کہے گا مجھے موقع کس نے دیا کہ کچھ سنوار سکوں؟ تو میرے بھائی تھوڑی سختی تھوڑا حوصلہ کچھ در گزر کچھ تلخیوں سے آہستہ آہستہ آگے بڑھیں آپ کی بیوی کوئی بازار سے خرید ی سبزی نہیں ہے کہ پسند نہ آئی تو اٹھا کے باہر پھینک دی کچھ سخت الفاظ کی معذرت گزار ش ہے کہ شادی سے پہلے پلیز پلیز ہزار ہا بار سوچ وچار کر لیا کریں کیوں؟؟؟؟

 

 

کیوں؟؟؟؟
کیوں کہ میرے بھائی بڑی مشکل سے اپنے جگر کے ٹکڑے کو والدین اور بھائی بہنیں آپ کے سپرد کرتے ہیں ایک طرف تو وہ اپنا دل کا ٹکڑا آپ کے حوالے کر تے ہیں دوسری طرف کیا معلوم کسی غریب باپ بھائی نے شادی کے لئے کہاں کہاں سے پیسہ پیسہ جوڑ کر یہ اہم فرض ادا کیا ہو گا تھوڑی دیر کیلئے سوچ لیا کریں دنیا کی چند تلخیاں۔ازداجی زندگی میں کچھ نوک جھونک۔تلخ کلامیوں۔کہیں کچھ ڈانٹ ڈپٹ تو کہیں پیار محبت سے درگزر کریں گے تو یہ زندگی گزر جائے گی اور روز قیامت کیا معلوم آپ کی برداشت در گزر ہی آپ کے رب کی در گزر کی صورت میں آپ کو جنت تک لے جائے۔

 

 

خواتین سے ایک گزارش اور ایک قیمتی تحفہ
پہلے میں خواتین سے گزارش کرنا چاہوں گا کہ آپ جہاں تک ہو سکے اپنا گھر بچانے کی کوشش کیا کریں۔آپ کی ضروریات آپ کی پریشانیاں آپ کے بچوں کی ذمہ داریاں صرف آپ کے خاوند نے اٹھانا ہیں نہ کہ اڑوس پڑوس کی ان پھبے کٹنیوں نے جو کان بھرتی رہتی ہیں کہ تیر ا کیا ہے یہاں وہ فلاں نند حکمرانی چلا رہی پے فلاں ساس نے تو تیرے پر جادو کرا رکھا ہے بیٹے کوتیرے پاس بھٹکنے بھی نہیں دیتی وغیرہ وغیرہ گزار ش کے بعد اب آتے ہیں ایک انتہائی قیمتی تحفے کی طرف۔

 

 

قیمتی تحفہ
شادی کو لے کر نئے گھر میں نئی فیملی میں ایڈجسٹ ہونے کے متعلق پریشانی میں مبتلا بچیوں کے لئے یہ ایک انمول تحفہ ہے کہ سسرال میں قدم رکھنے کے ساتھ ہی ایک ہی سانس میں سات مرتبہ (یاَوَدُوْدُ) کے وظیفہ کا ورد کرلینا ہے اس عمل کے بعد(انشاء اللہ) پہلے دن سے ہی سسرال میں آپ ایک خوشگوارماحول پائیں گی،آپ نے یہ وظیفہ(یاَوَدُوْدُ) کا ورد سات مرتبہ ایک ہی سانس میں کہنا ہے اور سسرال میں پہلا قدم رکھتے ہی اس وظیفہ کا ورد کرنا ہے۔

 

 

 

امید ہے نئی نویلی دلہن کاسسرال جنت کیسے بن سکتا ہے؟؟ عنوان کے ساتھ ڈیلی پاکستانی نیوز فورم پر ہماری یہ کاوش پسند آئی ہوگئی پھر ملیں گے ایک نئی تحریر کے ساتھ دعاوں میں یاد رکھیے گا۔شکریہ

شیئر کریں